Warning: include_once(analyticstracking.php): failed to open stream: No such file or directory in /home2/technotimes/public_html/includes/header.php on line 19 Warning: include_once(): Failed opening 'analyticstracking.php' for inclusion (include_path='.:/usr/lib/php:/usr/local/lib/php') in /home2/technotimes/public_html/includes/header.php on line 19

Posts Contributed By "ڈاکٹر محمد اعجاز تبسم"

  • 6 Posts in Total Contributed by ڈاکٹر محمد اعجاز تبسم
  • کروڑوں پاکستانیوں کیلئے ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ کا کردار

    پاکستان کا نہری نظام اور ریلوے لائنیں کچھ اس انداز سے تشکیل شدہ ہیں کہ انہیں مقامی منڈیوں کی نشوونماء کیلئے انتہائی کارگر تصور کیا جاتا ہے۔ ظاہر ہے اس کا سہرا یا تو قدرت کو جاتا ہے یا پھر اس میں ۳۰۰ سال قبل سامنے آنیوالی ان انسانی کاوشوں کا عمل دخل ہے جنہوں نے سوچ بچار کے بعد ملک بھر میں ریل گاڑیوں کی گزرگاہ کیلئے ایسے راستوں کا انتخاب کیا جو آج تک زراعت کی بڑھوتری کا محرک ثابت ہو رہے ہیں۔ اسکے علاوہ قابل ستائش وہ لوگ بھی ہیں جنہوں نے جی ٹی روڈ بھی ریلوے لائن کے متوازی بنائی۔ آج ذرا تصور کیجئے کہ پاکستان میں جہاں جہاں نہری نظام موجود ہے وہیں اناج اور غلے کی منڈیاں بھی وافر تعداد میں پائی جاتی ہیں، جہاں سے پھر قدرتی گزرگاہوں، ریل گاڑیوں اور سڑکوں کے ذریعے اناج کی ترسیل پ…Read More

  • ایوب ریسرچ سینٹر کی جدید اقسام آخری قسط

    پنجاب سیڈ کاؤنسل کی جانب سے زرعی اجناس اور پھلوں میں زیادہ پیداوار کی حامل ۴۰نئی اور جدید اقسام کی منظوری دی گئی ہے جن میں سے ۱۸ اقسام ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد کی جانب سے پلانٹ بریڈرز (زرعی ماہرین) کی زیرنگرانی خصوصی طور پر تیار کی گئی ہیں۔ پلانٹ بریڈرز کا خواب صرف یہ ہے کہ ہمارا ملک خوراک کے معاملے میں خود کفیل ہوجائے اور پاکستان خود کفیل اس وقت ہوگا جب ہمارے کاشتکار ماحول، زمین اور ضروریات کے مطابق فصلوں کی جدید اقسام کاشت کر کے زیادہ سے زیادہ پیداوار حاصل کریں گے۔ ایک …Read More

  • ایوب ریسرچ سینٹر کی جدید اقسام۔۔۔قسط سوئم

    ماحول کے مطابق زرعی اجناس یا پھلوں کی نئی قسم تیار کرنے کیلئے عموماً ۱۰ سال سے زائد عرصہ درکار ہوتا ہے اور حقیقت تو یہ ہے کہ ایم بی بی ایس ڈاکٹر اپنے کیریئر میں ۵ ہزار سے لیکر ۲۰ ہزار مریضوں کا علاج کرلیتے ہوں گے، لیکن زرعی ماہرین عوام کو بہتر خوراک فراہم کرنے کیلئے اپنا دن رات ایک کردیتے ہیں۔ حال ہی میں پنجاب سیڈ کاؤنسل کی جانب سے زرعی اجناس اور پھلوں میں زیادہ پیداوار کی حامل …Read More

  • ایوب ریسرچ سینٹر کی جدید اقسام

    (قسط دوئم) پنجاب سیڈ کاؤنسل کی جانب سے زرعی اجناس اور پھلوں میں زیادہ پیداوار کی حامل ۴۰ نئی اور جدید اقسام کی منظوری دی گئی ہے جن میں سے ۱۸ اقسام ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد کی جانب سے پلانٹ بریڈرز (زرعی ماہرین) کی زیرنگرانی خصوصی طور پر تیار کی گئی ہیں۔ پلانٹ بریڈرز کا خواب صرف یہ ہے کہ ہمارا ملک خوراک کے معاملے میں خود کفیل ہوجائے اور پاکستان خود کفیل اس وقت ہوگا جب ہمارے کاشتکار ماحول، زمین اور ضروریات کے مطابق فصلوں کی جدید اقسام کاشت کر کے زیادہ سے زیادہ پیداوار حاصل کریں گے۔ ایک کسان زیادہ پیداوار اسی وق…Read More

  • ایوب ریسرچ سینٹر کی جدید اقسام

    گندم کی جدید قسم گلیکسی ۲۰۱۳ ادارہ تحقیقات گندم فیصل آباد کی دریافت کردہ ہے۔ سال ۱۰۔۲۰۰۰ء کے موسم سرما میں ’’پنجاب۔۹۶‘‘ کو گندم کی ایک اور قسم ’’وطن‘‘ کے ساتھ ملاپ کروایا گیا اور پھر اگلے برس اس سے جنم لینے والے پودے کو گندم کی قسم ’’ایم ایچ ۹۷‘‘ کے ساتھ ملاپ کرواکر ان کی نسل آگے بڑھائی گئی۔ تحقیقاتی عمل جاری رکھتے ہوئے اس نسل سے حاصل ہونے والے اچھے اور خوبصورت پودوں کو اگلی فصل کے لئے منتخب کیا جاتا رہا۔ اسی طرح ۲۰۰۷ء کے موسم ربیع کی فصل میں ان پودوں کو ’’وی۔۰۷۰۹۶‘‘ کے کوڈ سے ایک اور قسم بطور کنٹرول استعمال کیا گیا اور مختلف تجربات کے ذری…Read More

  • گرے ہوئے کماد کو نقصان سے بچانا

    ویسے تو ہر فصل ہی کھلے آسمان کے نیچے نشوونما پاتی ہے، لیکن کماد ایک ایسی فصل ہے جس کا براہ راست آسمان کے نیچے رہنے کا ریکارڈ سب سے منفرد ہے ۔ موسم سرما کی شدید ٹھنڈ ہو یا گرمیوں کی تپتی لو، بارشیں ہوں یا تیز آندھی چل پڑے، کماد کی فصل ایسی ایک بے چاری فصل ہے جسے سر چھپانے کے لئے کوئی کمرہ یا اسٹور نصیب نہیں ہوتا، بلکہ یہ ہر وقت کھلے آسمان تلے پڑی رہتی ہے۔ یہ فصل کھیتوں اور کھلیانوں میں ہی پرورش پاتی ہے، یہیں جوان ہوتی ہے، یہیں پر اس کی برداشت کی جاتی ہے، اسی جگہ اس کا بیج بنایا جاتا ہے اور دوبارہ اسی جگہ اس کی کاشت بھی کر دی جاتی ہے۔ گنے کی کاشت کے ایسے علاقے پاکستان بھر میں تقریباً ۲۵ لاکھ ایکڑ رقبے تک پھیلے ہوئے …Read More