Warning: include_once(analyticstracking.php): failed to open stream: No such file or directory in /home2/technotimes/public_html/includes/header.php on line 19 Warning: include_once(): Failed opening 'analyticstracking.php' for inclusion (include_path='.:/usr/lib/php:/usr/local/lib/php') in /home2/technotimes/public_html/includes/header.php on line 19

You Are At Technology Timesمضامینپولٹری فیڈ میں مورنگا اولیفیرا کا استعمال


پولٹری فیڈ میں مورنگا اولیفیرا کا استعمال


بہت سے گرم اور گرم مرطوب ممالک میں مورنگا اولیفیرا کے مختلف حصے انسانوں کی خوراک میں شامل کئے جاتے ہیں۔ اسکے پتے جانوروں کی خوراک میں بھی ترجیحاً شامل کئے جارہے ہیں، لیکن ان پتوں کے اثرات، انڈے دینے والوں مرغیوں کی نسل کی نشوونماء اور برائیلر کی کارکردگی کیلئے تاحال تحقیقات جاری ہیں، جبکہ اسکے بیجوں کا اثر برائیلر مرغیوں کی نشوونماء کیلئے بہت مفید ثابت ہوا ہے۔ مورنگا اولیفیرا تجارتی مقاصد کیلئے بھارت، ایتھوپیا، فلپائن اور سوڈان میں وسیع پیمانے پر کاشت کیا جاتا ہے، جبکہ اسکے درخت قدرتی طور پر مشرقی، مغربی اور جنوبی افریقہ کے علاوہ گرم مرطوب علاقوں، ایشیاء کے گرم علاقوں اور بحرالکاہل کے متعدد جزیروں پر پائے جاتے ہیں۔
کیمیاوی تجزیہ کے مطابق مورنگا اولیفیرا کے پتوں میں ۲ء۲۷ فیصد پروٹین، ۹۱ء۵ فیصد نمی، ۱ء۱۷ فیصد لحمیات اور ۶ء۳۸ فیصد کاربوہائیڈریٹس پائے جاتے ہیں، جبکہ اسکے بیج میں ڈرائی میٹر کی بنیادپر ۸ء۳۹ فیصد ایتھر، ۶۵ء۳۱ فیصد پروٹین، ۵۴ء۷ فیصد فائبر، ۹ء۸ فیصد نمی اور ۵۴ء۶ فیصد دیگر اجزاء موجود ہوتے ہیں۔ اس کے علاوہ مورنگا کے بیجوں میں لیکٹن اور دیگر غیر غذائتی اجزاء بھی بہت کم مقدارمیں پائے جاتے ہیں۔
مورنگا اولیفیرا کے جراثیم کش اور آکسیڈینٹ مخالف عمل کو بیان کرتے ہوئے چند مصنفین کا کہنا ہے کہ مورنگا اولیفیرا کے بیج نکالنے سے ہی اس میں جراثیم کش خاصیت آتی ہے، جس کی وجہ اس کے لائیو فلیک عناصر ہیں۔ یہ عناصر خلوی جھلی کے ساتھ جکڑے ہوتے ہیں۔ مصنفین یہ بھی کہتے ہیں کہ مورنگا اولیفیرا کے نکلے ہوئے بیج میں جراثیم کش خاصیت، کاربکسلک ایسڈ، خلوی دیوار تباہ کرنے والے اینزائمز اور کائننز مخلف آکسیڈنیٹ عمل کرتے ہیں۔
انڈے دینے والی مرغیوں کی خوراک میں مورنگا اسیٹنوپٹیلا کے پتے واضح طور پر خام پروٹین اور خوراک کھانے کے عمل کو بڑھاتے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ اس کے استعمال سے مرغیوں کے مجموعی وزن میں بڑھوتری، اچھی خوراک کا تناسب اور اچھی پروٹین کا تناسب دوسری خوراک کی نسبت زیادہ ہے۔ مورنگا اولیفیرا کے پتوں کو خوراک میں ۶ فیصد ملانے سے جوان چوزے اچھی خوراک حاصل کرلیتے ہیں، جو اسکی متبادل خوراک (پروٹین کا مجموعہ) کے ساتھ چوزوں کی صحت پر منفی اثرات نہیں ڈالتے۔ انڈے دینے والی مرغی کی خوراک میں سورج مکھی کے بیج کے متبادل کے طور پر ۱۰ یا ۲۰ فیصد مورنگا اولیفیرا کے پتے کی خوراک ڈالی جائے تو یہ کھانے کی مقدار میں نمایاں طور پر اضافہ کرتا ہے۔ جب مورنگا اولیفیرا کے پتے کی ۲۰ فیصد خوراک انڈے دینے والی مرغی کی خوراک میں شامل کی جاتی ہے تو انڈوں کی پیداوار کم ہوجاتی ہے اور تبادلہ خوراک کا تناسب بڑھ جاتا ہے۔ اس مقدار میں ۵ فیصد اضافہ انڈے کے وزن کو نمایاں طور پر بڑھاتا ہے، لیکن ۲۰ فیصد کی سطح پر انڈے کے کم وزن کا مشاہدہ کیا گیا ہے۔ خوراک کے کھانے، خوراک کے تبادلہ تناسب، انڈوں کی پیداوار میں کمی، انڈوں کی پیداواری شرح اور مورنگا اولیفیرا کی اوپری سطح پر انڈوں کا وزن بنیادی طور پر ہضم ہونے کی کم طاقت اور پروٹین ہے۔
مورنگا اور لیفیرا پتے کی خوراک کا ۱۰ اضافہ ’’کوساوا چپ بیسڈ‘‘ میں انڈے دینے والی مرغی کو دیا جائے تو خوراک کے کھانے پر کوئی نمایاں اثر نہیں پڑتا۔ اگر اس کا موازنہ متوازن دی جانے والی خوراک کے ساتھ کیا جائے تو خوراک کے تبادلے کی شرح اور انڈے دینے کی شرح میں ’’کوساوا چپ‘‘ کے ساتھ مورنگا کے پتوں کی مقدار میں اضافہ سے انڈوں کا وزن نمایاں طور پر بڑھ جاتا ہے۔ انڈے دینے والی مرغی کی خوراک میں مورنگا کے پتوں کی مقدار میں مختلف سطح پر انڈے دینے کی صلاحیت اور انڈوں کی پیداوار میں کمی کا باعث بنتا ہے۔
برائیلر کی خوراک میں ۵ فیصد مورنگا اولیفیرا کے پتے شامل کرنے سے وزن کے حصول، خوراک کے جزو بدن بننے کی شرح اور خوراک کی قیمت میں کوئی خاص اثر نہیں پڑتا، بالخصوص اگر اس کا موازنہ کوساوا کے بغیر اور مورنگااولیفیرا کے پتوں کے بغیر ایسی خورا سے کیا جائے جس میں ۲۰ فیصد کوساوا اور صفر فیصد مورنگا اولیفیرا کے پتے شامل تھے، لیکن مورنگااولیفیرا کے پتوں کا ۵ فیصد سے زیادہ اضافہ برائیلر کی کارکردگی میں کمی لاتی ہے۔ ان نتائج کے برعکس یہ دیکھا گیا ہے کہ مورنگااولیفیرا کے پتوں کی ۱۰ فیصد شمولیت سے خوراک کھانے کے عمل، خوراک کے جزوبدن بننے کی شرح، گوشت کے وزن، پیداوار کی کارکردگی کے عمل اور خوراک کے خرچ پر کوئی اہم اثر نہیں پڑتا۔ مورنگا اولیفیرا کے پتے غذا میں شامل کرنے سے پروٹین کے انہضام میں اضافہ ہوجاتا ہے۔ مقدار میں تھوڑی سی تبدیلی خوراک کی قیمت اور برائیلر کی ضمنی صلاحیت کم کرتی ہے، جبکہ مورنگا اولیفیرا کے پتوں کے میل اور اسکے پتوں کے کیک کھلانے سے خوراک کی قیمت پر ۱۰ فیصد تک واضح فرق پڑتا ہے۔
مورنگا اولیفیرا کے ۲۴ فیصد پتے اگر پروان چڑھتی سنگل نسل کی مرغیوں کی خوراک میں ڈالے جائیں تو خوراک کی قیمت ایک کلو گوشت کیلئے زیادہ بنتی ہے، لیکن جب پرندوں کی خوراک میں مورنگا اولیفیرا کے ۸ فیصد یا ۱۶ پتے ڈالے جائیں تو ایک کلو گوشت حاصل کرنے کیلئے خوراک کی قیمت کم ہوجاتی ہے۔ پرورش پاتے ہوئے انڈے دینے والے چوزوں کی خوراک میں مورنگااولیفیرا کے پتوں کا ۶ فیصد، لیئر یعنی انڈے دینے والی مرغیوں کی خوراک میں ۱۰ فیصد، برائیلر (فارمی) مرغیوں کی خوراک میں ۵ فیصد اور دودھ چھوڑنے والے خرگوشوں کی خوراک میں ۱۰ فیصد ڈالا جاسکتا ہے اور اس سے ان کی کارکردگی پر کوئی منفی اثرات مرتب نہیں ہوتے۔ برائیلر (فارمی) مرغیوں کے اختتامی دورانیہ میں مورنگا کے بیجوں کا ۵ء۱ فیصد سفوف ڈالا جاسکتا ہے، لیکن ان کے ابتدائی دورانیہ میں نہیں ڈالا جاسکتا۔ معاشی فائدے کے حساب سے مورنگا کے پتے کی خوراک، جسے قیمت پر اثر انداز تصور کیاجاتا ہے، ۱۰ فیصد جو کہ فارمی مرغیوں میں مچھلی کی خوراک کے بدلے ہے، ۱۰۰فیصدشامل کی جاسکتی ہےجبکہ اسے ۸ فیصد یا ۱۶فیصد کے تناسب سے مرغیوں کی خوراک میں شامل کیا جاتا ہے۔ جو کہ پرورش پاتے ہوئے خرگوشوں کے لئے پسے ہوئے اخروٹوں کی خوراک کے بدلے ہے،


--

Short Link: http://technologytimes.pk/post.php?id=5861

Tags:

More Stories:

Comments On This Post

    No Comments Yet…

Leave a Reply